اشاعتیں

June, 2010 سے پوسٹس دکھائی جا رہی ہیں

ميرے وطن تيرى خاك ميں بھی روشنى ہے

يہ سچ ہے وسعت افلاك ميں بھی روشنى ہے  ميرے وطن تيرى خاك ميں بھی روشنى ہے
وطن كى خاك پر انوار ہے لباس مرا  سو میرے دامن صد چاک ميں بھی روشنى ہے
وطن كے سُكھ بھی ہمارے تھے ، دکھ بھی اپنے ہیں

سو ديکھ ديدہء نم ناك ميں بھی روشنى ہے


پیرزادہ  قاسم