ميرے وطن تيرى خاك ميں بھی روشنى ہے


يہ سچ ہے وسعت افلاك ميں بھی روشنى ہے 
ميرے وطن تيرى خاك ميں بھی روشنى ہے

وطن كى خاك پر انوار ہے لباس مرا 
سو میرے دامن صد چاک ميں بھی روشنى ہے

وطن كے سُكھ بھی ہمارے تھے ، دکھ بھی اپنے ہیں


سو ديکھ ديدہء نم ناك ميں بھی روشنى ہے 



پیرزادہ  قاسم

تبصرے

مقبول ترین تحریریں

محبت سب کے لیے نفرت کسی سے نہیں

کیا جزاک اللہ خیرا کے جواب میں وایاک کہنا بدعت ہے؟

استقبال رمضان کا روزہ رکھنے کی ممانعت

احسن القصص سے کیا مراد ہے؟ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

جھوٹے لوگوں کی ہر بات مصنوعی ہوتی ہے۔ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

مسجد کے بارے میں غلط خبر دینے پر برطانوی ذرائع ابلاغ کی بدترین سبکی

MUHAMMAD ( Sallallahu alaihi wa sallam)

تمہارے لیے حرام، میرے لیے حلال

حب رسول

قصيدة _ انتظار، من الشعر الأردي المعاصر