ورفعنا لک ذکرک



تیرے تیور، میرا زیور
تیری خوشبو، میری ساغر
تیرا شیوہ، میرا مسلک
ورفعنا لک ذکرک

میری منزل، تیری آہٹ
میرا سدرہ ، تیری چوکھٹ
تیرا صحرا، میرا پنگھٹ
ورفعنا لک ذکرک

میں ازل سے تیرا پیاسا
نہ ہو خالی میرا کاسہ
تیرے صدقے تیرا بالک
ورفعنا لک ذکرک

تیرے دم سے دل بِینا
کبھی کعبہ کبھی سِینا
نہ ہو کیوں پھر تیری خاطر...
میرا مرنا، میرا جینا ؟
ورفعنا لک ذکرک

*****

مظفر وارثی

تبصرے

مقبول ترین تحریریں

کیا جزاک اللہ خیرا کے جواب میں وایاک کہنا بدعت ہے؟

محبت سب کے لیے نفرت کسی سے نہیں

MUHAMMAD ( Sallallahu alaihi wa sallam)

استقبال رمضان کا روزہ رکھنے کی ممانعت

رمضان میں خواتین عبادت کا وقت کیسے نکالیں؟

نبی کریم ﷺ کی ازدواجی زندگی پر اعتراضات کا جواب

احسن القصص سے کیا مراد ہے؟ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

محبت جو دل بدل دے

موسم کے ساتھ رنگ بدلتے اہل دانش

شعائر اسلام کا استہزا اور آزادئ اظہار کی حدود