ورفعنا لک ذکرک



تیرے تیور، میرا زیور
تیری خوشبو، میری ساغر
تیرا شیوہ، میرا مسلک
ورفعنا لک ذکرک

میری منزل، تیری آہٹ
میرا سدرہ ، تیری چوکھٹ
تیرا صحرا، میرا پنگھٹ
ورفعنا لک ذکرک

میں ازل سے تیرا پیاسا
نہ ہو خالی میرا کاسہ
تیرے صدقے تیرا بالک
ورفعنا لک ذکرک

تیرے دم سے دل بِینا
کبھی کعبہ کبھی سِینا
نہ ہو کیوں پھر تیری خاطر...
میرا مرنا، میرا جینا ؟
ورفعنا لک ذکرک

*****

مظفر وارثی

تبصرے

مقبول ترین تحریریں

محبت سب کے لیے نفرت کسی سے نہیں

کیا جزاک اللہ خیرا کے جواب میں وایاک کہنا بدعت ہے؟

استقبال رمضان کا روزہ رکھنے کی ممانعت

احسن القصص سے کیا مراد ہے؟ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

جھوٹے لوگوں کی ہر بات مصنوعی ہوتی ہے۔ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

مسجد کے بارے میں غلط خبر دینے پر برطانوی ذرائع ابلاغ کی بدترین سبکی

MUHAMMAD ( Sallallahu alaihi wa sallam)

تمہارے لیے حرام، میرے لیے حلال

حب رسول

قصيدة _ انتظار، من الشعر الأردي المعاصر