محمد عربى صادق و سعيد و اميں


محمد عربى صادق و سعيد و اميں
سكون قلب پريشاں قرار جانِ حزيں

رفيق دازدگان غمگسارِ غمناكاں
خليق و خوش نظر و خوبرو و خنده جبيں

رسالت ابدى پر ہے جس كى مہرِ دوام
وہ جس كے بعد نبى و رسول كوئى نہيں

وہ صادق ازلى صدق كا رہا قاسم
اگرچہ كثرت كذاب تھى يسار و يميں

وہ قلب مخزن عرفاں وہ ذات معدن نور
وہ سينہ مصدر وحى خفى و وحى مبيں

وہ جس كے عہد ميں شامل ہيں سب سنين و دھور
وہ جس كے درپہ ہے خم ہر قديم و نو كى جبيں

وہ ذات جس كے مقامات ہيں ورائے شعور
كبھى ہے زينت منبر كبھى ہے تخت نشيں

وہ جس كى كنہ كا محرم ہے خالق ازلى
بشر كا زور تخيل فقط ظن و تخميں

مرا تو فرض ہے بھيجوں درود، نعت كہوں
طلب ہے داد كى مجھ كو نہ خواہش تحسيں

عليم شعر ميں كيونكر كرے ثنائے حضور
اس آسماں كے لئے تنگ ہے سخن كى زميں

شاعر: علیم ناصری

تبصرے

مقبول ترین تحریریں

کیا جزاک اللہ خیرا کے جواب میں وایاک کہنا بدعت ہے؟

محبت سب کے لیے نفرت کسی سے نہیں

MUHAMMAD ( Sallallahu alaihi wa sallam)

استقبال رمضان کا روزہ رکھنے کی ممانعت

رمضان میں خواتین عبادت کا وقت کیسے نکالیں؟

نبی کریم ﷺ کی ازدواجی زندگی پر اعتراضات کا جواب

احسن القصص سے کیا مراد ہے؟ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

محبت جو دل بدل دے

موسم کے ساتھ رنگ بدلتے اہل دانش

شعائر اسلام کا استہزا اور آزادئ اظہار کی حدود