جو تیرے بس میں ہو وہ کر



کبھی خدا کے ساتھ ہیں، کبھی بتوں کے درمیاں
عـجب ہمارا حــال ہے ، کبھی یہــاں کبھی وہاں

وہ رزم گاہِ شــوق ہو یا بزم ہائے دوســتاں
لیے چلی ہے جستجو تری مجھے کشاں کشاں

جو تیرے بس میں ہو وہ کر، تو بتکدوں میں دے اذاں
سـنائے جا سـنائے جا، مـحـبتوں کی داسـتاں

خالد اقبال تائب

تبصرے

Tehreem نے کہا…
such a nice blog
BinteHawwa نے کہا…
Thanks,JazakAllah Khair Tehreem.Not regular though.

مقبول ترین تحریریں

کیا جزاک اللہ خیرا کے جواب میں وایاک کہنا بدعت ہے؟

محبت سب کے لیے نفرت کسی سے نہیں

MUHAMMAD ( Sallallahu alaihi wa sallam)

استقبال رمضان کا روزہ رکھنے کی ممانعت

رمضان میں خواتین عبادت کا وقت کیسے نکالیں؟

نبی کریم ﷺ کی ازدواجی زندگی پر اعتراضات کا جواب

احسن القصص سے کیا مراد ہے؟ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

محبت جو دل بدل دے

موسم کے ساتھ رنگ بدلتے اہل دانش

شعائر اسلام کا استہزا اور آزادئ اظہار کی حدود