وہ ایک نام جو سرمایہء حیات بھی ہے



وہ ایک نام جو سرمایہء حیات بھی ہے 
وہ ایک ذات جو محبوبِ کائنات بھی ہے
 
ہر ایک رُخ سے ہے کامل حضورﷺ کی سیرت
اجل کا ذکر بھی ہے زندگی کی بات بھی ہے 

پہنچ سکا نہ کوئی اور مصطفی ﷺکے سوا 
وہاں کہ ختم جہاں حدِّ کائنات بھی ہے 

ہزار صبحیں تصدّق ہیں جس کی عظمت پر 
تری ﷺ حیات میں شامل وہ ایک رات بھی ہے

نویدِ خلد یہاں ہر قدم پہ ملتی ہے 
نبی ﷺ کی راہ گزر ہی رہِ نجات بِھی ہے 

درِ رسولﷺ پہ سجدہ گزارنے والو
بجز خدا کوئی حلاّلِ مشکلات بھی ہے ؟ 

عبث ہے خواب میں ارمانِ دیدِ شاہِ امم
دل و نگاہ میں ربطِ مواصلات بھی ہے 

میں کس سے پوچھوں یہ اعجاز مصطفی کے سوا
کہ میرا شعر کوئی وجہِ التفات بھی ہے 


شاعر: اعجاز رحمانی

تبصرے

مقبول ترین تحریریں

کیا جزاک اللہ خیرا کے جواب میں وایاک کہنا بدعت ہے؟

محبت سب کے لیے نفرت کسی سے نہیں

استقبال رمضان کا روزہ رکھنے کی ممانعت

احسن القصص سے کیا مراد ہے؟ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

جھوٹے لوگوں کی ہر بات مصنوعی ہوتی ہے۔ سورۃ یوسف حاصل مطالعہ

مسجد کے بارے میں غلط خبر دینے پر برطانوی ذرائع ابلاغ کی بدترین سبکی

تمہارے لیے حرام، میرے لیے حلال

اپنی مٹی پہ ہی چلنے کا سلیقہ سیکھو !

درس قرآن نہ گر ہم نے بھلایا ہوتا

حب رسول